مرکزی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامیAJK

اسلام آباد (نمائندہKN) کشمیر نیوز گروپ آف میڈیا کے سی سی او آغا السید منور حسین کاظمی کی مرکزی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی آزاد جموں وکشمیر ، گلگت و بلتستان محمد تنویر انور خان سے مرکز جماعت اسلامی بستی دارالاسلام عبداللہ بن عباس (برما پل اسلام آباد) میں ملاقات ۔ ملاقات کے دوران محمد تنویر انور خان نے کہا کہ اھل کشمیر تحریک آزادی کےمسلمہ موقف کو عالمی سطح پر تسلیم کروانے میں جماعت اسلامی نے ھمیشہ اپنی کاوشوں کو بروئے کار لایا ھے۔ تاھم 5 اگست 2019 کی فاشسٹ مودی سرکار نے وحدت کشمیر کو متاثر کرنے کی سازش کر کے مسلمانان کشمیر کی غیرت کو للکارا ھے۔ ریاست جموں وکشمیر کے غیور عوام برسوں سے اپنی عزت ، عصمت کے ساتھ ساتھ جان اور مال کی قربانیاں دینے میں مصروف ھیں جو رائیگاں نہیں جائیں گی۔ انہوں نے کہا لائن آف کنٹرول کے اس پار اگر گلگت بلتستان یا آزاد کشمیر کو صوبائی حیثیت دینے کی کوشش کی گئی تو ھمارے موقف میں کمزوری کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ میں باقاعدہ تسلیم شدہ مسلہ کشمیر پر بھی ھماری گرفت ڈھیلی پڑنے کا خدشہ ھوگا۔ آزاد کشمیر کا ریاستی تشخص برقرار رکھنے کیلئے تینوں حصوں کا آزاد کشمیر ، مقبوضہ جموں وکشمیر اور گلگت بلتستان ، وجود بطور اکائی بحال رکھنا ریاست جموں وکشمیر کی بنیادی ضرورت ھے ۔ حکومت پاکستان کو باقاعدہ طور پر ایک نائب وزیر خارجہ کا تقرر عمل میں لانا ھوگا جو ریاست سے تعلق رکھتا ھو اور خصوصی طور پر ریاست جموں وکشمیر کی نمائندگی کرسکے۔ اسکے علاوہ پوری دنیا میں تمام پاکستانی سفارت خانوں میں کشمیر ڈسک کا قیام عمل میں لایا جائے تاکہ کشمیر کے دیرینہ اور حل طلب مسلے کو کشمیریوں کی مرضی اور اقوامِ متحدہ کی تسلیم شدہ قراردادوں کے مطابق حل کیا جاسکے۔ زبانی کلامی کشمیر کا سفیر کہنے یا کہلوانے سے مسلے کا پائیدار حل ممکن نہیں ھے۔ اس موقع پر جماعت اسلامی کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل آزاد کشمیر وگلگت بلتستان امجد یوسف بھی موجود تھے۔ مرکزی سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی آزاد جموں وکشمیر محمد تنویر انور خان نے سید منور حسین کاظمی کو مولانا ابوالاعلیٰ مودودی کی کتاب کا تحفہ بھی پیش کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔